تازہ ترین
صفحہ اول » اردو کالم » ★شادی، جھیز اور طلاق★

★شادی، جھیز اور طلاق★

Marriage , divorce
کچھ والدین کو فکر ھوتی ھے که ان کی بیٹیوں کی شادی جلد ھو جاۓ، مگر یه فکر پریشانی میں تب بدل جاتی ھے جب لڑکے والے لڑکی کے گھر 10 بندوں کی فوج کے ساتھ آتے ھیں، ان دس کے دس افراد کا صرف ایک ھی مشن ھوتا ھے که لڑکی کے کے سر کے بال سے لے کر پاؤں کے ناخن تک خوب تنقیدی جائزه لیا جاۓ- که لڑکی کے بال کیسے تھے، لمبے تھے یا چھوٹے تھے، ان کا بس چلے تو بالوں میں ڈینڈرف بھی دیکھنے بیٹھ جائیں، پھر لڑکی کا رنگ دیکھا جاتا، پھر ناک په تنقید کے زیاده موٹی ھے یا زیاده لمبی ھے، آنکھوں کے گرد حلقے پڑے ھیں ، ھاتھ کالے ھیں ، قد چھوٹا ھے، موٹی تو ایسے جیسے سکوٹر ھو وغیره وغیره- جو بات اصل پوچھنے یا دیکھنے والی ھے جیسا که سیرت، اس پر دھیان ھی نھی دیا جاتا، اس کے بعد لڑکی کے گھر کو دیکھا جاتا ھے اور لڑکی کے باپ یا بھائیوں کا کاروبار دیکھا جاتا ھے، پھر جھیز کے بارے میں لمبی چوڑی فھرست بھی پیش کر دی جاتی ھے که ھمیں تو کچھ بھی نھی چاھیے، آپ کی بیٹی ھی نے استعمال کرنا ھے- استغفرالله
ان تمام باتوں کی وجه سے لڑکیوں کے رشتے مناسب وقت میں نھی ھوتے- اور وه بیچاری گھر میں بیٹھے بیٹھے نفسیاتی مریض بن جاتی ھیں- والدین اپنی بیٹیوں کی فکر میں وقت سے پھلے بوڑھے اور کمزور ھوجاتے ھیں- لڑکیاں جو معصوم کلیاں ھوتی ھیں ، سینوں میں شادی کے خواب سجاۓ ھوتی ھیں ، وه بوڑھی ھو رھی ھوتی ھیں ، پھر ایک وقت ایسا آتا ھے که ٣٠ سال کی لڑکی کی شادی ٦٠ سال کے آدمی سے ھوتی ھے اور وه بجی 4 یا 5 بچوں کا باپ ھوتا ھے، اس کی پھلی بیوی مر چکی ھوتی ھے اور یه معصوم کلیاں جو که اپنے جذبات رکھتی ھیں که ان کی اپنی ھی عمر کے مرد یا لڑکے سے شادی ھو گی اور وه زندگی کا خوب مزه لیں گی، وه ان جذبات کے ساتھ ھی مرجھا جاتی ھیں
الله کے بندو! خدا کا خوف کرو، یه کیا جھیز کی لعنت کو تم نے زندگی کا مقصد بنا لیا ھے- الله کی قسم… جھیز کا تقاضا کرنے والو… قیامت میں الله رب العزت کے آگے بھت شرمندگی اٹھانا پڑے گی- ان معصوم کلیوں کی بد دعائیں تمھیں جھنم کی طرف دھکیل دیں گی- پھر تم جھیز کے ساتھ ھی جھنم میں بھیج دیے جاؤ گے- کیا یه کم نھی که والدین اپنی عزت کو تمھارے قدموں میں رکھ دیتے ھیں اور تم اس عزت کو خوب برباد کرتے ھو- خدا کے لیے راه راست پر آجاؤ، یه درخواست مردوں کے ساتھ ساتھ عورتوں کے لیے بھی ھے، بعض اوقات مرد تو خاموش رھتا ھے مگر شوھر کی ماں اور بھنیں اور بھابھیاں بھی جھیز کا خوب طعنه دیتی ھیں- خدارا… اس لعنت کو چھوڑ دیں، خدارا اس لعنت کو چھوڑ دیں-


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون/ خبر پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔