تازہ ترین
صفحہ اول » پاکستان » سابق صدر جنرل(ر) ضیاالحق نے امریکہ سے ایٹم بم نہ بنانے کا وعد کیوں کیا تھا۔۔؟

سابق صدر جنرل(ر) ضیاالحق نے امریکہ سے ایٹم بم نہ بنانے کا وعد کیوں کیا تھا۔۔؟

Why did former President Gerald (R) Zia Ul Haq promise to US not make the Atom bomb

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) سی آئی اے کی نئی دستاویزات میں انکشاف کیا گیا ہے کہ جنرل ضیاء الحق نے امریکا سے ایٹم بم نہ بنانے کا وعدہ کیا تھا۔پانچ جولائی انیس سو بیاسی کوصدرضیاء الحق کا اس وقت کے امریکی صدر ریگن کے خط کا جواب منظر عام پر آگیا،نجی ٹی وی چینل اے آر وائی کی رپورٹ کے مطابق خط میں ضیاالحق نے کہا تھا کہ پاکستان جوہری ہتھیار بنانے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔سی آئی کی خفیہ دستاویز میں انکشاف کیا ہے کہ صدر رونلڈ ریگن نے اپنے خط میں پاکستان کے جوہری پروگرام کے حوالے سے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔ جس پر جنرل ضیاء نے لکھا انھیں اس بات سے انتہائی تکلیف ہوئی جب امریکی سفیر نے بتایا کہ پاکستان کے جوہری ہتھیار حاصل کرنے کے اقدامات کی مصدقہ معلومات ہیں۔صدر ضیاء نے خط میں مزید لکھا کہ ہم بتا چکے ہیں کہ پاکستان کا جوہری پروگرام محدود صلاحیت رکھتا ہے۔

اس بارے میں پراپیگینڈہ کیا جارہا ہے اس کا مقصد علاقائی حالات سے توجہ ہٹانا ہے۔خیال رہے کہ سی آئی اے نے ایک کروڑ تیس لاکھ صفحات کی خفیہ دستاویزات کو بیس برس مکمل ہونے پر ڈی کلاسیفائی کیا تھا، ان دستاویزات کے منظرعام پر آنے سے سی آئی اے کی تاریخ اور سرگرمیوں سے متعلق نئی معلومات سامنے آئیں گی۔جاری کردہ خفیہ دستاویزات میں ویتنام، کوریا اور سرد جنگ کے تنازعات کے دوران سی آئی اے کی سرگرمیوں کی تفصیلات موجود ہیں۔اڑن طشتری اور اسٹار گیٹ پروگرام کی تحقیقات سے متعلق معلومات بھی جاری کی گئی دستاویزات میں شامل ہیں، دستاویزات میں متعدد معلومات اور ان کے ذرائع کوقومی سلامتی کے پیش نظرخفیہ رکھا گیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون/ خبر پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔